بات بات پر کیوں آئے پھرتے ہیں

Poet: Asad
By: Asad, mpk

عشق کا بوجھ اٹھائے پھرتے ہیں
دل کو ھم دیوانہ بنائے پھرتے ہیں

دل کو منظور ھے کسی پر مر مٹنا
ہائے یہ کیسی شرط لگائے پھرتے ہیں

وہ غیر کا غصہ کیوں نکالے ھے ھم پر
بات بات پر کیوں آئے پھرتے ہیں

ھم ہیں مجنون یا پھر دیوانے کوئی
ہر بار کیوں پتھر کھائے پھرتے ہیں

کیوں نہیں دیتے وہ اپنے گھر کا پتہ
کیوں ہمیں در بدر پھرائے پھرتے ہیں

لوگ کیوں باز نہیں آتے یار اسد
کیوں دو دلوں میں آگ لگائے پھرتے ہیں

Rate it:
09 Oct, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asad
Visit 357 Other Poetries by Asad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City