برسات کی خوش رنگ فضاوں کا سماں ہو

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

برسات کی خوش رنگ فضاوں کا سماں ہو
میں اس کا کبھی نام پکارو وہ جہاں ہو

اک بار محبت کا کوئی پھول کھلا دو
اک بار محبت کی یہاں شام یہاں ہو

لوٹ آئے وہ لے کر مری روٹھی ہوئی نیندیں
وہ بھیجے گا کیا پیار کا پیغام کہاں ہو

بکھرے ہوئے بیٹھے ہیں وہی آپ وہی ہم
سوچوں کے دریچے ہیں وہی خواب وہاں ہو

اک چاند جدا اپنی زمیں سے جو ہوا تھا
واپس نہیں لوٹا وہ خلا وں سے عیاں ہو

تقدیر کے لکھے کو بدلنے کی طلب میں
باعزم ہو تدبیر پہ تدبیر نہاں ہو

اس کو تو کوئی شہر بھی اب راس نہیں ہے
میں اس کا کبھی نام پکارو وہ جہاں ہو

جس سمت سے آئے تھے اُسی سمت کو چل کر
عمال گذشتہ کے ثمر کا وہ زباں ہو

ہے کوئی ادا کر دے ہمیں پیار کی دولت
دھرتی پہ وفاؤں کا نگر ڈھونڈ وہاں ہو

اے وشمہ مجھے اپنی نگاہوں سے پلا دو
بھٹکے رہے بادل بھی ہوا وں کا سماں ہو
 

Rate it:
02 Jun, 2016

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4712 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City