بہت دیر ہو گئی ہے آنسو بہائے کو

Poet: دانش ارشاد
By: Danish irshad, Gojra

بہت دیر ہو گئی ہے آنسو بہائے کو
کوئی ایسی بات کہو ہمیں رلاؤ تو سہی

پردہ تو لازم ہے غیروں سے جاناں
ہم تو اپنے ہیں یہ چہرہ دکھاؤ تو سہی

لوٹ آئیں گے تمہارے پاس پل بھر میں
ان دوریوں کو تم کبھی مٹاؤ تو سہی

تیری زلفوں میں جو پُرسکون رات تھی
ویسی نیند ہمیں پھر سے سُلاؤ تو سہی

ہم تو حال اپنا سنا چکے ہیں تم کو
تم بھی حال اپنا کبھی سناؤ تو سہی

Rate it:
21 Jul, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Danish irshad
Visit Other Poetries by Danish irshad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City