بے ضمیر لوگوں نے مار ڈالا

Poet: saiyaan_sham
By: saiyaan_sham, rawalpindi

سنو
بے ضرر سی بات ہے
مگر ہے بہت ہی خاص سی
کہ اگ
قطعہ سر زمیں تھا
جسے پاک لوگوں نے سر کیا
ملت قاعد تھے جس کے پاس باں
تھا اقبال کا وہ اک خواب
آج اسی پاک قطعہ کو
کچھ بے زمیر لوگوں نے مار ڈالا
تو بے خبر ہے خود سے شام
یہ بے وقعت سے لوگ ہیں
نا مزاج شکر سے ہیں آشنا
نا ہیں انہیں کوئی پاس وفا
برتری کی ہے صرف چاہ انہیں
جو کہتے ہیں ہمیں اپنا رہنما
ان کی غلط سوچوں نے
اک لکھاری کو مار ڈالا

Rate it:
14 Jan, 2013

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: saiyaan_sham
جھونکا ہوا کا آیا اور آستاں چھوٹ گیا
میرے ہی ہاتھوں نے مجھے بے آسرا کیا
شاعرہ:سیاں شام
My Husband my proud
fb id: [email protected]
Hon
.. View More
Visit 175 Other Poetries by saiyaan_sham »

Reviews & Comments

App ney bohat khoob likha be happy

By: dr.zahid sheikh, lahore,pakistan on Jan, 15 2013

thnx sir
By: saiyaan_sham, rwalpindi on Jan, 27 2013
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City