دریا کبھی آنکھوں سے محبت کا بہا کر

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اخلاص ہے کیا چیز زمانے کو بتا کر
دریا کبھی آنکھوں سے محبت کا بہا کر

اب صبح کی بانہوں میں انہیں ڈھونڈ رہی ہوں
کچھ خواب جو آنکھوں میں ہی رکھے تھے سجا کر

یادوں کے تعاقب میں گزاری ہیں یہ صدیاں
ملا کچھ بھی نہیں دیکھو ہمیں جان گنوا کر

اس رات کی آغوش میں چمکیں گے نہ تارے
اب دید کی کرنوں سے تو ہر سمت ضیا کر

جب آنکھ کی تحویل میں آنسو ہی نہیں ہیں
کیا لینا ہے پھر دردِ محبت کو بہا کر

چمکے ہیں مرے ساتھ بجھی شب کے ستارے
نکلوں جو کبھی چاند کی کرنوں سے نہا کر

وہ پیار کا پنچھی ہے پلٹ آئے گا وشمہ
تو عشق کی مسجد میں شب و روز دعا کر

Rate it:
13 Dec, 2017

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4712 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City