دل میں نفرت کی وہ دیوار اٹھا دیتا ہے

Poet: Tanzeem Akhtar
By: Tanzeem Akhtar , doha

دل میں نفرت کی وہ دیوار اٹھا دیتا ہے
*رنجشوں کو کوئی دانستہ ہوا دیتا ہے*

رخ سے پردہ وہ زرا سا جو ہٹا لیتا ہے
چاند کیوں خود کو گھٹاؤں میں چھپا دیتا ہے؟

ہوش اڑ جاتا ہے، سنبھلا نہیں جاتا مجھ سے
پردہ جب جب بھی وہ چہرے سے ہٹا دیتا ہے

آپ کا آنا یوں محفل میں سنور کر اتنا
بزم کو اور بھی رنگین بنا دیتا ہے

کیوں مہکتی ہے ہمیشہ یہ لحد کی مٹی ؟
کون چادر نئی پھولوں کی چڑھا دیتا ہے ؟

نہ سمجھ اپنے سے کمزور کسی کو تنظیمؔ
داغ سورج میں بھی اک چاند لگا دیتا ہے

Rate it:
09 Jun, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Tanzeem Akhtar
Visit Other Poetries by Tanzeem Akhtar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City