دل کدھر لگتا ہے

Poet: نعمان صدیقی
By: Noman Baqi Siddiqi, Karachi

تمہارا ہو نتیجہ اپنا ثمر لگتا ہے
تم جہاں بھی ہو اپنا گھر لگتا ہے

جاو تو پھر واپس ضرور تم آجانا
جدا نہ ہو جاو یہی اک ڈر لگتا ہے

دل بھی بس ہے ایسا تمہارے سنگ چلتا ہے
تم جدھر ہوتے ہو یہ اُدھر لگتا ہے

ویران سا لگے ہے مجھے اپنا گھر بھی
تمہارے بغیر میرا دل کدھر لگتا ہے

آنے پر تمہارے یہ موڈ ہے بدلتا
ٹھیرا جو ہوا ہے بہتی نہر لگتا ہے

جدای میں تمہاری ہے بجھا بجھا نعمان
تصور ہو تمہارا چڑھتا قمر لگتا ہے
 

Rate it:
17 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Noman Baqi Siddiqi
Visit 63 Other Poetries by Noman Baqi Siddiqi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City