رو لینا

Poet: سعدیہ اعجاز
By: Sadia Ijaz Hussain (IH), Lahore, University of Education

کبھی مقتل سے نکلو تو ذرا جی بھر کے رو لینا
کبھی انصاف سے اپنا آنچل پرو لینا

ہمار ے سامنے آ کر ہمارے رو برو ہونا
کبھی آ کے, کبھی جا کے, کبھی ددر پے رو لینا

سنا ہے آج تم نے کسی سے شکوہ کیا ہمارا
ذرا پاس آ کے تم جی بھر کے رو لینا

اداس آنکھوں سے بھا لینا جی بھر کے دریا تم
کبھی ہسنا ,کبھی رونا ,کبھی اداس, ہو جانا

ہے انسان کی فطرت رنگ بدلنے کی
کبھی جو سچ بولوں ,تو تم بھی بدل جانا

نہیں دستور دنیا میں سچ سہنے کا سعدیہؔ
ہے اجازت تمھے تم پردے میں اپنا منہ چھپا لینا

Rate it:
26 Mar, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Sadia Ijaz Hussain (IH)
Visit 19 Other Poetries by Sadia Ijaz Hussain (IH) »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City