ضدی

Poet: شفق
By: Shafaq, Lahore

ضدی آپ ہیں تو ہم بھی سر پھرے ہیں
نہ مانیں گے آپ تو ہم بھی اڑے ہیں
آج تو آپ سے سوال ہو گا
محبت کا آپ کی امتحان ہو گا
چاہتے ہیں اگر ہم کو سب سے زیادہ
چھوڑ کر سب ہمارے پاس بیٹھنا ہو گا
نہیں چلنے دیں گے بہانہ کوئی
فرار ہونے کا طریقہ کوئی
بانہوں میں لے کر ہم کو جھومنا ہو گا
لبوں سے لبوں کو چومنا ہو گا
دل کی پیاس کو بجھانا ہو گا
روح کو روح میں بسانا ہو گا
قریب اتنا آپ آیں گے ہمارے
ہو گی نہ کوئی حد نہ فاصلہ ہو گا
ہر دیوار کو گرانا ہو گا
حد سے آگے جانا ہو گا
پاگل ہو جایں ہم
کچھ ایسے پیار جتانا ہو گا
بس آج آپ کو ہمیں اپنا بنانا ہو گا

Rate it:
25 Oct, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Shafaq
Visit 29 Other Poetries by Shafaq »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City