نئے زخموں کے سلنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

Poet: SAGAR HAIDER ABBASI
By: sagar haider abbasi, Karachi

نئے زخموں کے سلنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے
بچھڑکر پھر سے ملنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

ضروری نہیں بہار آتے ہی سبھی شاخیں کِھل اٹھیں
کچھ پھولوں کے کِھلنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

کبھی فرصت کے لمحوں میں اگر تجھ کو سوچ بیٹھوں تو
تیرے خیالوں سے نکلنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

ابھی تو راج کرتے ہیں دل پہ خزاؤں کے موسم
موسموں کے بدلنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

نہ ہو بیتاب تم ساگر لوگوں کے دل میں اُترنے کو
شاعروں کے ابھرنے میں کچھ وقت تو آخر لگتا ہے

Rate it:
19 Oct, 2016

More Urdu Ghazals Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: sagar haider abbasi
Sagar haider Abbasi
From Karachi Pakistan
.. View More
Visit 216 Other Poetries by sagar haider abbasi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City