پھر آئینہ حیات

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: washma khan, Kuala Lampur

پھر آئینہ حیات کو میں نے سجا لیا
جل جل کے خود کو آگ میں کندن بنا لیا

ہمدم تری تلاش میں مٹی میں مل گئی
"دیپک کی مثل مجھ کو محبت نے کھا لیا"

اشعار میں نمایاں رکھی فکر و فن کی بات
غزلوں کو دے کے رنگ کبھی گنگنا لیا

افشاں چھڑک کے پیار کی زخموں پہ بے وفا
جب آئی تیری یاد تو بس مسکرا لیا

خوشیاں نثار کر کے کسی باغبان نے
جلنے سے اپنے پیار کا گلشن بچا لیا

اترا تھا کوئی خواب کی تعبیر ڈھوندنے
آنکھوں کے ریگزار میں رستہ گنوا لیا

وشمہ کسی کی یاد کا دل کے جہان میں
سویا ہوا تھا درد کیوں پھر سے جگا لیا

Rate it:
13 Jan, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4549 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City