کاش ایسا ہو

Poet: Oshlayk
By: Oshlayk, Bahwalpur

کاش ایسا کہ شغل لگ جائے
چلیں اس بہانے وہ ہنسیں گے تو سہی

کاش ایسا ہو کہ مرض لگ جائے
چلیں اس بہانے ہم رخصت تو ہوں گے

کاش ایسا ہو کہ ہم رخصت ہو جائیں
چلیں اس بہانے وہ درود تو پڑھیں گے

کاش ایسا ہو کہ ہم بیمار ہو جائیں
چلیں اس بہانے وہ دعا تو کریں گے

کاش ایسا ہو کہ ہم گرنے لگیں
چلیں اس بہانے وہ سنبھالیں گے تو سہی

کاش ایسا ہو کہ ہم سنبھل جائیں
چلیں اس بہانے وہ ہمیں گرائیں گے تو سہی

کاش ایسا ہو ک کاش سب ہو جائے
چلیں اس بہانے ہم کاش تو نہ کہیں گے

Rate it:
10 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Oshlayk
Visit Other Poetries by Oshlayk »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City