تمہیں دیکھ کر لگتا ہے ایسے

Poet: درخشندہBy: درخشندہ, Huston

تمہیں دیکھ کر لگتا ہے ایسے
ایک ہی چمن کے دو پھول جیسے

پون کے سنگ وہ اپنے جھولے
یوں گلے مل رہے تھے ہم جیسے

تمہیں دیکھ کر لگتا ہے ایسے
آنگن میں ساتھ کھیلے ہم حیسے

کبھی میں نے کبھی تم نے
چھو لیا ہو ایک دوجے کو جیسے

اک دوجے کی چاہ میں کبھی
ہنس د یۓ کبھی رو د یۓ حیسے

سانجھے مانجھے کے یہ رشتے
ایسے کے تم لگے اپنے حیسے

پھر جانے ہم یوں بچھڑے کیسے
پھر ملے تو لگا جدا ہوے نہ جیسے

پر مل کر بھی ہم ملے نہ کبھی
ہوتا یوں سنگم روحوں کا حیسے

اس رشتے کو نام ہم کیا دیں
نہ ہو کر بھی یہ اک رشتہ جیسے

نہ ہوے ہم فرشتے نہ تم فرشتے
پھر ہوے ہم دو دیوانے جیسے

Rate it:
Views: 929
08 Oct, 2021