ایسا کھیل تو خودکش حملہ آور بھی نہیں کھیلتے

ایسا کھیل تو خودکش حملہ آور بھی نہیں کھیلتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق میکسیکو کےایک چھوٹے سے قصبے’ سان جوآن ڈی لا ویگا‘ میں ایک تہوار منایا جاتا ہے جس میں ایک کھیل کھیلا جاتا ہے جو بہت خطرناک ہے۔

میکسیکو کا یہ تہوار ہر سال فروری کے آخری ہفتے میں ایک میلہ لگتا ہے جب منایا جاتا ہے۔

خیال رہے کیونکہ اس تہوار میں مقامی لوگ لمبے دستوں والے بھاری ہتھوڑے، دھماکا خیز مواد پر برساتے ہیں جس سے وہ پھٹ پڑتے ہیں اور ایک زوردار دھماکے کے ساتھ ہی سب طرف سیاہ و سفید دھواں پھیل جاتا ہے۔

ویڈیو گیم کھیل کر 30 دن میں 20 پونڈ وزن کم،مگوئی گیبریل

یاد رہے یہ تہوار 300 سال پرانا ہے لیکن مقامی باشندے اس کی ابتداء سے متعلق مختلف رائے رکھتے ہیں۔

اس تہوار کے بارے میں کچھلوگوں کا کہنا ہے کہ  آج سے تین صدیوں پہلے کان کے مالک اور اس علاقے کے ایک امیر آدمی کے پاس وافر مقدار میں سونا تھا لیکن ایک دن ڈاکوؤں نے وہ سارا سونا لوٹ لیا اور اس امیر شخص نے مقامی پادری سان جوآن باتستا کی مدد سے اپنا سونا ڈاکوؤں سے واپس حاصل کیا تھا۔

دلچسپ یہ کہ اس واقع کے بعد سے ہی  اس قصبے کا نام بھی پادری سان جوآن کے نام پر رکھ دیا گیا اور ہر سال اس واقعے کی یاد میں ’’دھماکے سے پھٹتے ہتھوڑوں کا تہوار‘‘ منایا جانے لگا۔

میکسیکو میں یہ تہوار گزشتہ تین صدی رونما ہونے والے واقع کیکی یاد میں منایا جاتا ہے کیونکہ پادری سان جوانیتو نے لٹیروں سے لڑنے کےلیے دھماکہ خیز مادّے کو پتھر پر رکھ کر لمبے ہتھوڑوں سے کوٹا تھا، جس کے باعث درجنوں لٹیرے اور ڈاکو زخمی ہوگئے تھے اور یوں پادری کو اُن کے خلاف فتح ملی تھی۔

میکسیکو میں جو تہوار مناتے ہیں اس میں یہی ہوتا ہے کہ اس تہوار میں حصہ لینے والے لوگ لمبے دستوں والے ہتھوڑے اور تھیلیوں میں گھریلو ساختہ بارود لے کر گاؤں کے بیرونی کناروں پر واقع خالی میدانوں میں پہنچ جاتے ہیں۔

اور پھر تھیلیوں میں سے تھوڑا تھوڑا بارود لے کر، فولادی پٹیوں پر ڈھیریوں کی شکل میں رکھ دیا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ اس تہوار مین کھیلے جانے والے کھیل کے آخری مرحلے میںسب سے خطرناک مرحلے میں، باہمت افراد ان ڈھیریوں پر پوری طاقت سے لمبے دستوں والے ہتھوڑے برساتے ہیں جوخطرناک ہے کیونکہ  دھماکا ہونے پر ہتھوڑا مارنے والا شخص شدید زخمی ہوسکتا ہے اور مر بھی سکتا ہے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.