اس کے منہ سے سن کے ہم کو اپنا حال اچھا لگا

Poet: شہزاد حسین سائل(shahzad hussain sa'yl)
By: shahzad hussain sa'yl, sialkot

اس کے منہ سے سن کے ہم کو اپنا حال اچھا لگا
ڈھل گئی جب ہجر کی شب تو وصال اچھا لگا

ہم کو کیسے بن لیا تھا اس نے اپنے جال میں
توڑ ڈالا جب اسے تو ہم کو جال اچھا لگا

ڈھل گئی جب عمر میری تولگا میں سوچنے
جو تھا تیرے سنگ گزرا ہم کو سال اچھا لگا

بعد مدت ہم نے دیکھا جو اسے بازار میں
ہم کو اس کی سادگی میں بھی جمال اچھا لگا

اس کا یوں ہر بات پہ رکنا سمجھنا بولنا
ہم کو اس کی گفتگو میں اعتدال اچھا لگا

لوگ کہتے ہیں کے سائل تھا بہت مغرور شخص
سن کے لوگوں کا ہمیں ایسا خیال اچھا لگا

Rate it:
23 Oct, 2015

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: shahzad hussain sa'yal
i am a poet from sialkot also doin Bs(IT) from lahore For more poetry just like my page on facebook. Bazm-e-sukhan


thnxxx
.. View More
Visit 25 Other Poetries by shahzad hussain sa'yal »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City