ایک ٹھوکر پہ وہ ناداں سر بازار گرے ۔

Poet: نوشین فاطمہ عبدالحق
By: نوشین فاطمہ عبدالحق , جدہ , المملکہ العربیہ السعودیہ ۔

نہ گرے ہیں کبھی اعداء , نہ ہی اغیار گرے
جب بھی نظروں سے گرے یار و نمک خوار گرے

جن کا آموختہ دہراتے رہے مور و صبا
ایک ٹھوکر پہ وہ ناداں سر بازار گرے

ہمیں گرتا ہوا دیکھا تو وہ خوش ہو کے ہنسے
ہم اٹھے , پھر گرے , پھر اٹھ کے کئی بار گرے

مقصد زندگی بس ایک بچا ہے نوشی
جیسے ممکن ہو بس اک دوجے کی دستار گرے

Rate it:
16 Aug, 2015

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: nosheen fatima abdulhaqq
میرے شاعری پر مشتمل صفحے میں ایک نظم بعنوان "کبھی جو ہم فراغت میں " موجود ہے ۔ اس سے پہلے کی تمام کاوشیں بےکار سمجھی جائیں ۔ کیونکہ وہ عروض سے آشنائی .. View More
Visit 48 Other Poetries by nosheen fatima abdulhaqq »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City