تنہائی

Poet: محمد عیسی سلطان
By: Muhammad Essa Sultan, Gujranwala

مان ہی لیتے ہیں تمہاری بات کو
میرے اندر اب لڑنے کی ہمت نہیں ہے

ہر طرف اب ہے تنہائی کا عالم
میری تو جیسے کوئی سمت نہیں ہے

کرتے ہو میرے سامنے ذکر رقیب
نظر میں تمہاری میری عظمت نہیں ہے

کوہ طور پہ جو دیکھا نہیں جا سکا
اس نور کی کوئی قیمت نہیں ہے

سارا شہر پیدل چان مارا لیکن
گلی تیری کی کوئی علامت نہیں ہے

عیسیٰ کو لوگ مجنون کہتے ہیں
عزا ہے یہ، کوئی تہمت نہیں ہے
 

Rate it:
17 Aug, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Essa Sultan
Visit 8 Other Poetries by Muhammad Essa Sultan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City