تنہا نکل پڑے ھین تنہا سفر کو ہم

Poet: اسد رضا۔۔
By: ASAD, MPK

 تنہا نکل پڑے ھین تنہا سفر کو ہم۔
لے کر نئی آرزو نئی رہگذر کو ہم۔

ھے جسکی جستجو شاید وہ ملے کہین۔
اے دل ! چھان مارین گے شہر کو ہم۔

کوئی تو ہوگا منتظر ادھر اپنی دید کا۔
راہ چلتے ڈھونڈھ لینگے اس نظر کو ہم۔

سنا ھے اس کے حسن کا شیدا ھے زمانہ۔
کیا برا جو دیکھ لین اس گوہر کو ہم؟

وہ جو اک نگاہ سے دل گرویدہ کر لے۔
بارہا ڈھونڈھتے ہین اس دیدہ ور کو ہم۔

اسد منزل عشق کا کوئی پتہ تو دو۔
کب تک لیےپھرین تنہادل بےصبر کو ہم؟

Rate it:
01 Mar, 2021

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: ASAD
Visit 471 Other Poetries by ASAD »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>