تیری باتیں تیری یادیں تیرا چہرا خواب کر دونگا

Poet: احسن فیاض
By: Ahsin Fayaz, Badin

تیری باتیں تیری یادیں تیرا چہرا خواب کر دونگا
عمرِ رواں کو ایسے جیوں گا کے عذاب کر دونگا،

دہر کی سوچ سے بھی اونچے ارادے ہیں میرے،
میں وقت آنے پے سب کو لاجواب کر دونگا

تیری فرقت کو کبھی نہ بننے دونگا عادت اپنی،
میں اپنی دنیا میں تجھے بے حساب کر دونگا

کاروانِ ابر لے کر میں جب تیرے کوچے سے گذرا،
خوشبؤِ فراق سے شھر کی گلیوں کو گلاب کر دونگا

رکھوالا ہوں تیری دہلیز کا یہ فکرِ لحد کی بات ہے،
کے مرونگا تو خد کو تیرے چہرے کا نقاب کر دونگا

وہ لمسِ ماضی میری آنکھ کا خواب تھے جیسے،
میں اب گذرے لمحوں کو رفہ دفہ جناب کر دونگا

تدفین میری کسی آگ میں ہی کر دینا احسن،
مئےنوشِ زمانہ ہوں ارضِ قبر کو خراب کر دونگا

Rate it:
06 Dec, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Ahsin Fayaz
Visit 31 Other Poetries by Ahsin Fayaz »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City