تیری میری پریت امر ہے۔

Poet: مونا شہزاد
By: Mona Shehzad., Calgary

سجن کہ دو زمانے سے
تم ازل سے میرے ہو
ابد تک کے لئے
میں تو وہ وقت ہوں
جس میں جی رہے ہو تم
میں تو وہ خواب ہوں
جو پلکوں پر بن رہے ہو تم
میں تو وہ ساز ہوں
جو چھیڑ رہے ہو تم
میں تو وہ سایہ ہوں
جس سے لپٹ رہے ہو تم۔
میں تو وہ مناجات ہوں
جس کو دہرا رہے ہو تم
میں تو وہ درپن ہوں
جس میں بس رہے ہو تم
میں تو وہ موسم ہوں
جس کی بہار دیکھ رہے ہو تم
غرض تیری ہر سانس میں بسی خوشبو ہوں میں
تیری نظر کی بینائی ہوں میں
تیرے احساس کی روح ہوں میں
اس لئے ہی تو کہتی ہوں
کہ تیری میری پریت امر ہے
تم ازل سے میرے ہو
ابد تک کے لئے

Rate it:
22 Jun, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Mona Shehzad
I used to write with my maiden name during my student life. After marriage we came to Canada, I got occupied in making and bringing up of my family. .. View More
Visit 109 Other Poetries by Mona Shehzad »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City