حسسن وفا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: washma khan washma, Karachi

حُسنِ وفا سے نظریں ہٹا ہی نہ پائے ہم
اُن کی نظر سے دل یہ بچا ہی نہ پائے ہم

مدت کے بعد آپ کا کیا خط ہمیں ملا
تحریر سے نگاہیں ہٹا ہی نہ پائے ہم

خونِ جگر جلا کے بھی جلتے رہے مگر
آنکھوں کے یہ چراغ بجھا ہی نہ پائے ہم

آنکھوں نے تجھ کو کھو دیا کوشش کے باوجود
تصویر تیری دل پہ بنا ہی نہ پائے ہم

برباد کر کے رکھ گئے ہو زندگی مری
آگے تمہارے عشق کے جا ہی نہ پائے ہم

سنتے رہے ہیں ان کی ہی رودادِ زندگی
اپنا تو حال وشمہ سنا ہی نہ پائے ہم

Rate it:
02 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4549 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City