حیا سے تو نے جھکائیں جو دلنشیں آنکھیں (گیت)

Poet: Dr.Zahid Sheikh
By: Dr.Zahid Sheikh, Lahore Pakistan

حیا سے تو نے جھکائیں جو دلنشیں آنکھیں
دیوانہ مجھ کو بنانے لگیں حسیں آنکھیں

ترے بدن کی بلاتی ہے عنبریں خوشبو
تری لگن ہے مجھے،تیرے پیار کی آرزو
ترس رہا ہوں میں ہونٹوں کے جام پینے کو
یہ تیری آنکھوں میں کاجل ہے یا حسیں جادو

سحر لٹاتی ہیں تیری یہ سرمگیں آنکھیں
دیوانہ مجھ کو بنانے لگیں حسیں آنکھیں

کھلی کھی سی جو زلفیں ہوا میں لہرائیں
لگا یوں مست گھٹائیں فلک پہ ہیں چھائیں
تمھارے آنے سے دل میں گلاب کھلنے لگے
اداس روح میں کلیاں وفا کی مسکائیں

ترنگ جاگی ،اٹھیں جو یہ نازنیں آنکھیں
دیوانہ مجھ کو بنانے لگیں حسیں آنکھیں

حیا سے تو نے جھکائیں جو دلنشیں آنکھیں
دیوانہ مجھ کو بنانے لگیں حسیں آنکھیں

Rate it:
01 Jul, 2014

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Dr. Zahid Sheikh
AM AN HONEST MAN AND LIKE HONEST AND LOVING PEOPLE....
[email protected]
.. View More
Visit 447 Other Poetries by Dr. Zahid Sheikh »

Reviews & Comments

MY NAME IS SABA I LIKE THIS POETRY

By: saba zafar, jhelum on Jul, 18 2014

THANX SABA SAHIBA FOR APPRECIATION
THANX AGAIN
BE HAPPY WITH ALL THE BEAUTIES OF LIFE
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 19 2014

Bohat piara geet hai kash isey koee gaey bhi

By: Anwar Kazmi, Sargodha on Jul, 08 2014

گیت کی تعریف کے لیے شکریہ قبول فرمائیے
اور
سدا مسکراتے رہیں
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 08 2014

بہت خوب زاہد بھائی۔۔۔
یہ گیت پہلے بھی پڑھا اور اب دوبارہ پڑھ کر
پہلے سے بھی زیادہ لطف آیا۔۔۔
ہمیشہ کی طرح ریشمی جذبات میں لپٹے
ہوئے کومل خیالات۔۔
کسی رومینٹک فضا میں لہلہاتے درختوں کی
طرح خوشگوار۔۔
ایک ایک لفظ دل میں اترتا ہوا اور فضا کو معطر
کرتا ہوا۔۔
تفصیل سے تبصرہ کرنا چاہ رہا تھا لیکن آجکل
رمضان کی وجہ سے کچھ مصروفیات اور ٹائم
ٹیبل میں تبدیلی آئی ہوئی ہے اسلئے باقی
ادھار کر لیتے ہیں۔۔
رمضان المبارک کی بابرکت ساعتیں بہت بہت
مبارک ہوں۔۔۔
ہمیشہ خوش رہیں۔۔۔
رمضان میں شاید ویب پر حاضر نہ ہو سکوں۔۔
انشااللہ جب بھی ممکن ہوا آپ کے ساتھ اس
محفل میں حاضر ہوں گا۔۔۔
دعاؤن میں یاد رکھئے گا۔۔
والسلام

By: muhammad nawaz, sangla hill on Jul, 05 2014

نواز بھائی آداب عرض!
آپ آئے بہار آئی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آپ نے ہمیشہ کی
طرح اپنے الفاظ کے پھول کھلائے اور تعریف
کی برکھا برسائی
آپ ایسے علم و ادب سے تعلق رکھنے والے شخص
اور ایک بہترین شاعر کی تعریف ایک سند کا درجہ
رکھتی ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نہ صرف یہ بلکہ آپ کی شاعری سے
بہت کچھ نیا سیکھنے کو بھی ملتا ہے
ہماری خوش بختی کہ نواز بھائی ایسا مہربان ساتھی
اس ویب پر موجود ہے وگرنہ
دل کو بہلانے کہاں جاتے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ویسے یہ سب آپ کا حسن نظر اور
حسن اخلاق ہے کہ اس ناچیز کی عام سی شاعری
پر بھی تعریف کے پھولوں کی بارش فرما دیتے ہیں
حقیقی طور پر میں اس کا اہل کہاں
آپ کا ایک بار پھر شکریہ ادا کرتا ہوں اس دعا کے ساتھ
کہ آپ اور آپ کے اہل خانہ پر اللہ تعالیٰ ہمیشہ اپنے
فضل وکرم کی بارش کرے اور آپ کی ہر جائز خواہش پوری ہو
آمین
رمضان کے اس مقدس ماہ کی مبارک ساعتوں میں اللہ
پاک آپ اور آپ کے اہل خانہ کو ہر نعمت سے نوازے اور
زیادہ سے زیادہ اپنی عبادت کرنے کی ہمت اور موقع عطا فرمائے
ایسے میں مجھ فقیر کو بھی اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے
گا نواز بھائی دی گریٹ
اللہ نگہیبان
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 07 2014

رومان کی وادی میں جنم لینے والی اس تخلیق کی خوبصورتی بے مثل ہے
اور دل کو چھو لیتی ہے۔۔۔
ہر شعر محبت کے شدید احساسات اور جذبات سے لبریز اور محبوب کی حیا
کو خراج تحسین پیش کرتی ہوئی تخلیق جس کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے۔
آپ کے گیتوں میں جو حسن اور ترنم اور رومان کی چاشنی ہوتی ہے وہ اپنی تعریف آپ
ہے۔۔۔
آپ کے گیتوں کا جواب نہیں زاہد صاحب
آپ جس صنف میں بھی لکھتے ہیں کمال کر دیتے ہیں۔۔اور آپ کی شاعری میں آپ ہی
کا انوکھا اور منفرد انداز ہوتا ہے اور آپ کو اوروں سے ہمیشہ ممتاز کرتا ہے اور قاری کے
دل میں ایک خاص جگہ بنا لیتا ہے۔۔۔۔
آپ کی شاعری تو ایسی ہے کہ ایک لائن پڑھ کر ہی اندازہ ہو جاتا ہے کہ یہ کلام کس
کا ہو گا۔۔۔
بہت خوب
ہمیشہ کی طرح بہت رواں
مترنم
رسیلا
رومان پرور
اور دلکش گیت
جو صرف آپ ہی کے قلم سے جنم لے سکتا ہے۔
اس بے مثال گیت کے لئے
داد کے تازہ گلاب
اور
دعاؤں کے نذرانے حاضر ہیں۔۔
خدا کرے آپ کا قلم ہمیشہ اسی طرح پھول اگلتا رہے۔۔۔۔
ایسی ہی بے مثال اور دل کو گدگدانے والے تخلیقات جنم دیتا رہے۔
اور ہمارے دل کو چھوتا رہے۔
آمین۔۔
رمضان کی بے شمار خوشیاں اور برکتیں آپ کو نصیب ہوں۔۔
آمین۔
آپ کی فیملی کو اور بچوں کو بھی میری جانب سے نیک تمناؤں کے نذرانے
قبول ہوں۔
پھولوں کی طرح مسکراتے رہئیے۔

By: Azra Naz, Reading UK on Jul, 05 2014

عزرا ناز صاحبہ آداب عرض !
پہلے تو ماہ رمضان کی مبارک باد قبول فرمائیں
اللہ تعالیٰ آپ اور آپ کے اہل خانہ کے لیے ہر مہینے کی طرح
اس ماہ کو بھی خیر و برکت اور فیوض و برکات کا
مہینہ بنائے اور آپ کی ہر جائز دلی مراد کو پورا کرے،آمین
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔آپ نے میرے اس گیت کی تعریف فرمائی
۔۔۔۔۔ریشم کی طرح ملائم اور مشک و عنبر سے مشکبار ان
الفاظ کو پڑھ کر روح جیسے کھل اٹھی اور لگا ہر طرف موسم بہار
چھایا ہوا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جب کوئی ایسی دلکشا تعریف کر ڈالے تو لکھنے کی امنگ کیوں نہ
جاگے۔اور تعریف کرنے والی خود ایک مستند شاعرہ ہو اور اپنی
شاعری کی مہک ساری دنیا میں پھیلا رہی ہو
بھلا کون ہے جو آپ کے رسلیلے اور مترنم کلام پر نہ جھومتا ہو
اردو اور پنجابی غزلوں کے بعد اب تو آپ نے گیت بھی لکھنے
شروع کر دیے ہیں اب تو جھومنے والے وجد کی کیفیت میں
آنے لگیں گے۔اس کیفیت میں مبتلا ہو کر گرنے والوں کو
اٹھانے کا بندوبست پہلے سے کر رکھیے
مجھے کامل یقین تھا کہ آپ کے اندر ایک بہت اچھی گیت
نگار موجود ہے اور آپ نے گیت لکھ کر اس بات کو ثابت کر
بھی دیا۔آپ کے خوبصورت گیتوں کا انتظار رہے گا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آپ نے لکھا کہ میری ایک لائن سے آپ کو میری شاعری ہونے
کا اندازہ ہو جاتا ہے ۔یہی حال آپ کی شاعری کا بھی ہے کہ
عنوان ہی چغلی کھانے لگتا ہے کہ اس میں لپٹی شاعری
ہماری محترم شاعرہ عزرا ناز صاحبہ کی ہی ہو سکتی ہے
۔بھلا اور کون ہے جو اتنے مترنم اور دلپزیر اشعار کہتا ہو
“شاعری کی مہک“ تو بس ایک ہی ہے ۔اور اب کیا کہوں
آپ کا ایک بار پھر شکریہ ادا کرتا ہوں کہ آپ نے وقت نکال
کر اس قدر تفصیل سے کومینٹس کیے حالانکہ اسی
گیت پر آپ پہلے بھی اپنا تبصرہ پیش کر چکی ہیں۔ میں
نے اسی پیج پر ابتدا میں لکھ دیا تھا کہ یہ گیت پہلے بھی
ویب پر ان لائن ہو چکا ہے۔مقصد یہی تھا کہ جو ساتھی تبصرہ
کر چکے انھیں پھر سے تبصرہ کرنے کی زحمت نہ ہو۔چلیے
ہم نے ایک میٹھا پھل دو بار کھا لیا،شکریہ شکریہ شکریہ
سب کے لیے وہی دعائیں جو ہر لمحہ دل سے نکلتی ہیں
اللہ ان دعاؤں کو پورا فرمائے،امین
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 07 2014

Aap key geeton ka bhi kia rang dhang hai key insaan jhoom uthta hai.Bohat piara aur romantic geet hai be had psand aya

By: Sajda Kanwal, Multan on Jul, 05 2014

ساجدہ کنول صاحبہ آپ کا بے حد شکریہ کہ آپ نے
ہمیشہ کی طرح اپنے خوبصورت تعریفی الفاظ سے
سراہا
ہمیشہ پھولوں کی طرح مسکراتی رہیں
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 07 2014

Dr.Sahib aap key geeton sey is web par sari bahar hai.Geet likhney mein aap ko jo maharat hasil hai wo kum hi dekhney mein aee hai.Aap ko to filmon key liey geet likhney chahien.Magar ab jis kisam ki filmen ban rahi hein un mein to bus fahashi hi nazar aati hai.Wo filmen ab kahan banti hein jin ka har tara sey miar bohat buland hota tha.Un mein moseqi aur shayri bhi kamal ki hoti thi.Agar aap us dor mein hotey to bohat kamyab geet nigar hotey.
Aap ka ye geet aap key baaqi sub geeton ki tarah bohat hi haseen o jamil hai .Isey parh kar hi sara manzar aankhon key samney ghoom jata hai.Aap ney web par pehley ki tarah ana shuru kar dia hai to web kholney ko dil chahta hai.Esey hi achey geet aur ghazlen bhejtey rahen sir aap ki bari nwazish ho gi
Allah aap ko khush rakhey

By: Haroon Gillani, Pakistan on Jul, 03 2014

بہت شکریہ ہارون صاحب آپ نے ہمیشہ کی طرح
بے حد عمدہ الفاظ میں میری شاعری کو سراہا
اور کھلے دل سے تعریف فرمائی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آپ نے درست فرمایا کہ نہ اب پہلے جیسی فلمیں
بنتی ہیں اور نہ ہی ان میں گیتوں کا پہلے سا
معیار برقرار رہا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔یہی وجہ ہے کہ آج
بھی پرانے گیت ہی ہر دلعزیز ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔میں نے ہمیشہ
کوشش کی ہے کہ اپنے گیتوں میں شاعری کے
مروجہ اصولوں کو پیش نظر رکھوں اور انھیں عام فہم
بناؤں۔اس کے ساتھ ساتھ ان کی صوتی خوبصورتی
مجروح نہ ہو۔اگر یہ دھن کے بغیر بھی ہوں تو پڑھنے
مین بھلے لگیں۔اپنی ان کوششوں میں کس حد تک کامیاب
رہا ہوں اس کا فیصلہ آپ سب ریڈرز ہی کر سکتے ہیں
مجھے یہ جان کر بے حد اطمینان محسوس ہوتا ہے کہ اس
ویب پر گیت لکھنے کی جو روایت میں نے شروع کی ہے
پڑھنے والوں نے اے بے حد پسند کیا ہے ۔میری کوشش ہو
گی کہ مزید خوبصورت گیت آپ سب پرھنے والوں کے لیے
لکھوں۔دراصل گیت لکھنے کے لیے خاص ماحول اور موڈ دونوں
کا ہونا ضروری ہے۔دیکھیے اس سلسلے میں قدرت آئیندہ
بھی میری کتنی مدد کرتی ہے
آپ کا ایک بار پھر بے حد شکریہ
اپنی دعاؤں میں ہمیشہ یاد رکھیے گا
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 06 2014

What a remarkable piece of poetry tinged with the sweetness of love.you have wonderfully depicted the beautiful eyes of the beloved that has cast a lasting spell on you.. It shows as if you are mesmerized by the beauty and charm of her eyes.Thanks for shedding poetic gems with us.This is a song of love and romance which directly touches the hearts of readers.
You have blurt out your feelings impressively and in a very charming manner.TAKE CARE ZAHID SB

By: Nishat Anjali, India on Jul, 02 2014

THANX NISHAT ANJALI SAHIBA FOR APPRECIATING MY
SONG IN A VERY LOVELY MANNER.YOUR WORDS ARE LIKE
HONEY,LIKE FLOWERS AND SPREAD FRAGRANCE OF
YOUR SWEET EMOTIONS.
IT IS MY GOOD FORTUNE THAT YOU ALWAYS
SEND COMMENTS OF APPRECIATION
AND LIKE MY POETRY.
THANX AGAIN
BE HAPPY WITH ALL THE BEAUTIES OF LIFE
By: Dr.Zahid sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 06 2014

نوٹ: یہ گیت پہلے بھی اس ویب پر بھجوا چکا ہوں
اس خیال سے دوبارہ بھجوا رہا ہوں کہ میرے وہ ساتھی
اور قارئین بھی پڑھ لیں جو پہلے اسے نہیں پڑھ سکے
شکریہ

By: Dr.Zahid Sheikh, Lahore Pakistan on Jul, 02 2014

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City