زہر

Poet: شفق
By: Shafaq, Lahore

مارنے کے لیے زہر ضروری نہیں تھا
تم منہ موڑ لیتے ہم مر جاتے
پیار نہیں تھا تو کہ دیتے
ہم چار قدم پیچھے ہو جاتے
تیری عاشقی میں پہلے ہی برباد تھے
تیری نارضگی میں کون سا جی لیتے
تو ایک بار کہ تو دیتا جانے کو
تیری خواہش پر سر جھکاتے
دے کر ہمیں زہر اب پچھتاؤ گے
ہم جیسا عاشق نہ ڈھونڈ پاؤ گے
ملنے کو بے تاب رہتے تھے ہم تم سے
آب فراق میں ہمارے جل جل جاؤ گے
زہر دے کر ہمیں جو تم خوش تھے
آب روز تنہای میں ماتم مناؤ گے
مر گئے ہیں اگر ہم تو
چین سے تم بھی نہ جی پاؤ گے

Rate it:
01 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Shafaq
Visit 61 Other Poetries by Shafaq »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City