صبح سویرے دیکھا ہم نے اک چہرہ شاداب

Poet: محمد فیصل
By: Muhammad Faisal, Karachi

صبح سویرے دیکھا ہم نے اک چہرہ شاداب
روشن روشن آنکھیں جس کی وہ چندے ماہتاب

بستی بستی قریہ قریہ مچی ہے جس کی دھوم
ایسا حسن تو عنقا یارو وہ ٹھہرا نایاب

بحرِ وفا میں غرقابی کا تم کو کیسا خوف
قدم اُٹھاوَ بڑھتے جاوَ رستہ ہے پایاب

طور طریقے دنیا والے سب تم کو مبروک
راہِ جنوں کے سیکھ لو ہم سے تم رسم و آداب

تونے غزل میں بدلا ہے جو اپنا یہ بہروپ
فیصل اس پہ خندہ زن ہیں تیرے سب احباب

Rate it:
06 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Faisal
Visit 76 Other Poetries by Muhammad Faisal »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City