فقرہ

Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi, Karachi

مجھ سے مل کر وہ بھی شاید بدگماں ہو جائے گا
" میرا ہر فقرہ مکمل داستاں ہو جائے گا "

بس مجھے خاموش رہنے دو یہی بہتر بھی ہے
بات جو نکلی تو پھر سب کچھ بیاں ہوجائے گا

تم سے ملنے کا کوئی بھی اب ارادہ ہے نہیں
سلسلہ پھر منقطع یہ میری جاں ہو جائے گا

آج مجھ کو ہے گماں لازم وہ آئیں گے یہاں
جو نہ ہونا تھا کبھی وہ بھی یہاں ہو جائے گا

ساری یادوں کو ڈبو ڈالے گا یوں شب بھر میں وہ
آنکھ سے میری اگر دریا رواں ہو جائے گا

آج ان کے آنے پر یہ عین ممکن ہے کہ اب
درد جو دل میں تھا پنہاں اب عیاں ہو جائے گا

کیوں تو لکھتا ہے اب ارشیؔ باتیں ساری سچ یہیں
پھر مخالف اب ترے سارا جہاں ہو جائے گا
 

Rate it:
25 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Arshad Qureshi
My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More
Visit 208 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City