لپٹا ہوا چہرہ ہے اندھیرے کی ردا میں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

لپٹا ہوا چہرہ ہے اندھیرے کی ردا میں
اور شام ہے اس دل کے دھڑکنے کی صدا میں

اک شخص چھپا بیٹھا ہے دل کے کسی کونے
پھر آگ سی بھڑکی ہے یہ سانسوں کی ہوا میں

حیرت ہے کوئی آنکھ سے آنسو نہیں نکلا
ویسے تو کڑا وقت بھی کاٹا ہے دعا میں

روتی ہوں تری یاد کے دامن سے لپٹ کر
جب اونگھنے لگتی ہوں میں خوابوں کی ادا میں

یادوں کے تعاقب میں گزاری ہیں یہ صدیاں
کیا لطف ملا مجھ کو تری کرب و بلا میں

وہ پیار کا پنچھی ہے پلٹ آئے گا وشمہ
اک تیر محبت کا جو پھینکوں گی فضا میں

Rate it:
13 Jun, 2017

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4713 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City