نظم

Poet: Ameer usman
By: Ameer usman , علی پور چھٹہ

عشق کی مستی ہے
یہ وہ ہستی ہے
کوٹھی مندر یہ
مسجد بستی ہے
سچے جھوٹے لوگ
نفس پرستی ہے
اب بھی امیرقوم
غربا کو ڈستی ہے
سچ میں دولت ہے
ہاۓ یہ سستی ہے
کون کرے گا یہ
بات جو ججتی ہے
قوم کومستی ہے
آنکھ پِگلتی ہے
دیکھ یہ میری تو
آنکھ ٹپکتی ہے
قوم کو مستی ہے
قوم کو مستی ہے
لہریہ مغربی ہی
کیوں یہ ججتی ہے
دور رہو اس سے
اس میں پستی ہے
قوم سمجھتی ہے?
آنکھ برستی ہے
(اَمیرعثمان)

Rate it:
20 Apr, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Ameer usman
Visit 11 Other Poetries by Ameer usman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City