نگاہوں سے نگاہوں کا کلام ہوتا ہے

Poet: شفق
By: Shafaq, Lahore

مدت ہوی ہم ان سے ہم کلام نہیں ہوئے
پھر بھی ایک دوسرے سے لاتعلق نہیں ہوئے
محفل میں ان کی آج بھی ہمارا ذکر ہوتا ہے
نام لے کر ہمارا آج بھی ان کا مسکرانا ہوتا ہے
خاموشی سے گزر جاتے ہیں ہم
اگر راہ میں سامنا ہو جائے
مگر نگاہوں سے نگاہوں کا سلام ہوتا ہے
کیا ہوا جو ایک نہ ہو سکے ہم
عشق میں تعلق روح سے ہے
جسموں کا کہاں سوال ہوتا ہے
ہے وہ کسی اور کا مگر دل اب بھی میرا ہے
جب پیار سے دیکھتا ہے مجھے
تو اس بات کا احساس ہوتا ہے

Rate it:
06 Nov, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Shafaq
Visit 29 Other Poetries by Shafaq »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City