وصالِ یار اب تو خواب ہوتا جا رہا ہے

Poet: JAVAID DANIEL
By: JAVAID DANIEL, Lahore

وصالِ یار اب تو خواب ہوتا جا رہا ہے
یہ دِل اُس کے لیے بے تاب ہوتا جا رہا ہے

یہ کیسا دشتِ حیرت ہے جہاں ہم آ گئے ہیں
کہ پیاسا دُھوپ میں سیراب ہوتا جا رہا ہے

بہت سے لوگ جائیں گے اُسے اب ڈھونڈ نے کو
وفا کا نام بھی نایاب ہوتا جا رہا ہے

مجھے اِس عہد کا سُقراط سمجھا جا رہا ہے
کہ ہر اِک جام اب زَہراب ہوتا جا رہا ہے

نجانے کب تلک یونہی قرنطینہ رہے گا؟
رقم جاویدؔ ! پھر اِک باب ہوتا جا رہا ہے
 

Rate it:
30 Apr, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: JAVAID DANIEL
Visit 6 Other Poetries by JAVAID DANIEL »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City