وہ رابطے بھی انوکھے جو آکے بیٹھے ہیں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, منیلا

وہ رابطے بھی انوکھے جو آکے بیٹھے ہیں
وہ قربتیں بھی نرالی سجا کے بیٹھے ہیں

سوال بن کے سلگتے ہیں رات بھر تارے
کہاں ہے نیند ہماری وہ آکے بیٹھے ہیں

بلاتا رہتا ہے جنگل ہمیں بہانوں سے
سنیں جو اس کی نہیں جو سنا کے بیٹھے ہیں

چراغ بزم ستم ہیں ہمارا حال نہ پوچھ
جلے تھے شام سے پہلے بجھا کے بیٹھے ہیں

یہ رات کچھ بھی نہیں تھی یہ رات سب کچھ ہے
طلوع جام سے پہلے اٹھا کے بیٹھے ہیں

پھسلتی جاتی ہے ہاتھوں سے ریت لمحوں کی
تمہارے نام سے پہلے جلا کے بیٹھے ہیں

حقیقتوں کا بدلنا تو خواب ہے وشمہ
مگر یہ خواب ہے ایسا اڑا کے بیٹھے ہیں

Rate it:
18 Jan, 2021

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: وشمہ خان وشمہ
I am honest loyal.. View More
Visit 4713 Other Poetries by وشمہ خان وشمہ »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City