پیار کا کاروبار کرتا ہوں

Poet: mahir bilgrami
By: Abbas, Quetta

پیار کا کاروبار کرتا ہوں
سب کو دنیا میں پیار کرتا ہوں

خود پہ میں اعتبار کرتا ہوں
پیار کرتا تھا پیار کرتا ہوں

آہ بے اختیار کرتا ہوں
یاد جب اس کا پیار کرتا ہوں

مجھ کو نفرت سے سخت نفرت ہے
پیار کو دل سے پیار کرتا ہوں

موت کا انتظار کیا معنی
زندگانی سے پیار کرتا ہوں

سبزہ و خار و گل سبھی ہیں عزیز
سارے گلشن کو پیار کرتا ہوں

دوست کر لیتا ہوں عدو کو بھی
دشمنوں کو بھی پیار کرتا ہوں

مجھ کو کیا ہو کسی کا کچھ مسلک
میں شعار اپنا پیار کرتا ہوں

مجھ کو سنگیں بتوں سے الفت ہے
پتھروں کو میں پیار کرتا ہوں

بچ کے چلنا سکھایا کانٹوں نے
اس میں میں ان کو پیار کرتا ہوں

عمر دکھ درد میں کٹی اپنی
اس لیے غم سے پیار کرتا ہوں

لوٹ لے دل جو آنکھ ملتے ہی
ایسے رہزن کو پیار کرتا ہوں

ان کو آتا ہے جس قدر غصہ
اتنا ہی اور پیار کرتا ہوں

مجھ میں رچ بس گیا ہے پیار ایسا
سب کو دنیا میں پیار کرتا ہوں

روز اول سے آج تک ماہرؔ
اس کو نادیدہ پیار کرتا ہوں

Rate it:
14 Jan, 2021

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: Hamariweb
Visit Other Poetries by Hamariweb »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City