چلو باھر چلتے ہیں دل کے بہلانے کو

Poet: Asad
By: Asad, mpk

فسانے غم کے ہیں اور بھی سنانے کو
چلا آ کبھی تو بھی فرصت پاکر زمانے کو

پھرتا ھے مارا مارا گلی گلی در بدر۔
ہنوز کون سمجھائے اب تیرے دیوانے کو

کیوں افسردہ بیٹھے ہو گھر کے کونے میں
چلو باھر چلتے ہیں دل کے بہلانے کو

مجھکو کیا معلوم تھا کہ گھاٹے کا ھے سودا
میں تو گیا تھا وان دل کی قیمت بڑھانے کو

پہلے سے زمانے نے غم دیے ہیں بیشمار
اور تو بھی باز آیا نہیں چلا آیا صبر آزمانے کو

حیف !! اب کس طرح یقین دلاؤں میں اسے
جب خودسر روک رکھا ھے اس نے قسم اٹھانے کو

اسد زخم الفت کے اپنے بھر گئے کب کے
کیوں نہیں آتا کوئی تازہ نمک چھڑکانے کو

Rate it:
31 Aug, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asad
Visit 357 Other Poetries by Asad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City