چہرہ گلاب کا نقاب سے ہٹ گیا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, منیلا

چیرے پہ نقاب کر کے
سمٹ کر وہ نکلی تھی گھر سے
چادر میں لپٹی تھی علم کی تلاش میں
راہِ حق پر نکلی تھی روشنی اجالے سے
اپنے من تن کو چھپائ تھی
آندھی اور اندھیرے سے
وہ تو بہت ڈرتی تھی
وہ نازک خیال نازک طبح
دلربا لہجے میں بات کرتی تھی
اک خوفناک چیخ نے
لرزادیا اس کا بدن
ٹوٹ گئیں چوڑیاں بکھر گئیں چزیاں
خون میں نہا گئیں
بکھر کر رھ گئ
بکھری پڑی تھیں ہر طرف
چہرہ گلاب کا نقاب سے ہٹ گیا

Rate it:
21 Sep, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4582 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City