ہٹا دو تم ان آنکھوں سے یہ جو کاجل کا پہرا ہے

Poet: Tanzeem Akhtar
By: Tanzeem Akhtar, doha

ہٹا دو تم ان آنکھوں سے یہ جو کاجل کا پہرا ہے
نہ جانے کب سے اک قطرہ اسی سرحد پہ ٹھہرا ہے

تصور میں اسے جب دیکھتا ہوں، ڈوب جاتا ہوں
سمندر تیری آنکھوں کا حقیقت میں جو گہرا ہے

میں تیری یاد کو کیسے بھلا خود سے الگ کردوں
ہمیشہ سامنے میرے حسیں تیرا ہی چہرا ہے

کسی سے عدل کی امید، کوئی کس طرح رکھے
سنے گا کون اب فریاد جب منصف ہی بہرا ہے

اتر جائے گا تیرے ہاتھ سے رنگِ حنا لیکن
مٹے گا نہ کبھی دل سے وفا کا نقش گہرا ہے

تمہارے بعد اے جاناں کہوں کیا حال ہے میرا
ہر اک منظر تھما سا اور لگے یہ وقت ٹھہرا ہے

Rate it:
28 May, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Tanzeem Akhtar
Visit Other Poetries by Tanzeem Akhtar »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City