وہ صبح کے ہاتھوں کانور گہنا

Poet: Ruqayyah MaalikBy: Ruqayyah Maalik, Lahore

وہ صبح کے ہاتھوں کانور گہنا
وہ شب کی آنکھوں میں سیاہ کاجل

ندی کے پانی میں عکس نرگس
فلک کے دامن میں چلتا بادل

وہ ابرنیساں کا پہلا قطرہ
دھنک کے رنگوں کی مسکراہٹ

افق کے گالوں کی وہ شفق ھے
وہ ہی تخیل کی قلبی راھت

وہ جس سے باد صباء میں ٹھنڈک
وہ جس سے شبنم میں تازگی سی

جس کی آنکھوں کے رنگ بحر میں
اسی سے لہروں میں زندگی سی

چمن کے پہلو میں گل فشانی
گلوں سے عنبرورنگ فشانی

کسی شجر کی گداز کونپل
وہ تتلیوں کی حسین رانی

سب حسن آفاق اس کے دم سے
جو وہ نہیں تو ختم کہانی

Rate it:
Views: 410
17 Feb, 2013