....بهت غصیلا لهجه هے ....بهت انداز نرالا هے

Poet: ایچ ایم کاشف علی
By: H M Kashif Ali, Lahore

بہت غصّیلا لہجہ ہی
بہت انداز نرالہ ہے

کہیں ہنسی بھی آتی ہے
کہیں آنسوؤں کو پالا ہے

پھولوں جیسے مزاج کو
آنسوؤں نے اچھالا ہے

چوٹی چوٹی امیدیں
بڑے بڑے خواب ہیں

اتنے سے ہی دل میں اس نے
سب کچھ ہی پالا ہے

دل میں بہت سی باتیں ہیں
جن سے منسلک ذاتیں ہیں

سب کچھ چاہتے ہوئے بھی اسکے
زبان پے لگا اک تالا ہے

کیسی خوشبو والی گردن
جس میں یہ اک مالا ہے

دکھ سہتے بھی کہنا اسکا
سب کچھ آعلی آعلی ہے

Rate it:
01 Mar, 2016

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: H M Kashif Ali
Visit 19 Other Poetries by H M Kashif Ali »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City