تیرے بن اب داستانِ زندگی کے دور کیا

Poet: کرم ترابی
By: Karam Turabi, Karachi

تیرے بن اب داستانِ زندگی کے دور کیا
کیسی منزل,کیسے رستے,کیا سفر,موڑ کیا

ساری کلیاں,سارے گل اور خوشبو پھیکے ہیں
کون تتلی,کون بلبل,کیسی قمری,مور کیا

بے اجازت دل تو کیا,گھر میں کبھی آتا نہیں
میں مہذب شخص ہوں,سمجھا ہے مجھ کو چور کیا

کوئی اہلِ عقل ہو تو اک خموشی بہت ہے
کوئی سمجھے ہی نہیں تو کیا خموشی,شور کیا؟

پانچ کافوں کے توسط سے تعریف دی جیئے
کون؟کیوں؟کیسے؟کہاں سے؟ اور کیا؟

زور چلتا ہے وہاں,جہاں زور چلتا ہو کرم
سامنے جب یار ہو چلتا ہے پھر زور کیا؟

Rate it:
31 May, 2020

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Karam Turabi
Visit 4 Other Poetries by Karam Turabi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City