وقت کی قید سے رہا ہو جائیں

Poet: Asad
By: Asad, mpk

 وقت کی قید سے رہا ہو جائیں
ھم تم ملین اور ھوا ہو جائیں

ابھی تو ملے ہیں جنم کے بچھڑے
کیون ابھی سے جدا ہو جائیں؟؟

بیٹھے بٹھائے کبھی ھم سوچتے ہیں
کہ زندگی کسی کی نہ بقا ہو جائیں

دور تک نگاہ میں ھے جلوہ انکا
وہ اگر چاہیں تو نما ہو جائیں

کہتے ہیں الگ ہی رہنا ھے بہتر
الگ سے بہتر کیوں نہ جدا ہو جائیں

ڈوبنے مت دینا پیار کی اپنے کشتی
جب تک کہ پار نہ دریا ہو جائیں

اشکوں کی قیمت !!! یہ انمول ھیرے
جب خون ٹپکیں بے بہا ہو جائیں

آؤ چلیں مل کر طرف ان کی جانب
کیا خبر اسد وہ رھ نما ہو جائیں

Rate it:
15 Sep, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asad
Visit 357 Other Poetries by Asad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City