'آپ کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، ہم ٹھیک ہو جائیں گے'

کراچی — 

"مجھے بہت رونا آتا تھا۔ میں ہر وقت یہی سوچتی تھی کہ مجھے کوئی اسکول داخلہ نہیں دیتا۔ میں کیسے پڑھوں گی، کیسے اپنے خواب پورے کروں گی، کیسے آگے بڑھ پاؤں گی؟"

یہ کہنا ہے 15 سالہ کرن رفیق کا جو ایچ آئی وی کی مریضہ ہیں۔ لیکن اب نہ صرف اسکول جاتی ہیں بلکہ اپنی کلاس کی ہونہار طالبہ ہیں۔

کرن کا تعلق پاکستان کے صوبہ سندھ سے ہے۔ کرن کو کم عمری میں ہی خون کی منتقلی کے دوران ایچ آئی وی کا مرض لاحق ہو گیا تھا۔ جس کے بعد ان کی اور ان کے والدین کی زندگیوں میں مشکلات کا آغاز ہوا۔

وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے کرن نے بتایا کہ "والد نے کئی اسکولوں میں ان کے داخلے کی کوششیں کیں۔ وہ جب اسکول انتظامیہ کو میری بیماری کا بتاتے تو اسکول اُنہیں داخلہ دینے سے انکار کر دیتا، کہ کہیں یہ بیماری دوسرے بچوں کو نہ لگ جائے۔"

کرن کا کہنا ہے کہ یوں انکار کرنے والے اسکولوں کی فہرست طویل ہوتی گئی اور کرن کی تکلیف میں بھی اضافہ ہوتا گیا۔ لیکن پھر انہیں ایک ایسے اسکول میں داخلہ ملا جو صرف ایسے بچوں کے لیے بنایا گیا تھا جو کسی نہ کسی موذی بیماری کا شکار ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.