سینے میں ہے میلہ تنہائیوں کا

Poet: NEHAL INAYAT GILL
By: NEHAL GILL, Gujranwala

سینے میں ہے میلہ تنہائیوں کا
اچھا صلہ ملا ہمیں اچھائیوں کا
لفظ بے وفا متعارف کرایا مجبوریوں نے
لاچارگی نے آغاز کیا جدائیوں کا
کہاں ہوں میں ترے بعد اکیلا
پیچھے بدقسمتی آگے قافلہ پرچھائیوں کا
آج ہے دانشور سبب یہ ہے
انعام پایا ہے یہ لاپروائیوں کا
ہر دل میں ہیں راز ہزاروں
ناپ کون لے دل کی گہرائیوں کا
چلو شکر ہے آپ آباد ہیں
کچھ کم ہوا غم تبائیوں کا
نہالؔ جی چھوڑیئے تبلیغِ حق یہاں
یہ شہر ہی ہے برائیوں کا
 

Rate it:
22 May, 2015

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS
About the Author: NEHAL INAYAT GILL
Any Special Fairy Delicate
Komal Pari koi Khassssss.
******NKEOHMAALL******
https://www.facebook.com/pages/Poet-Nehal-GILL/335224583195776?ref=book
.. View More
Visit 512 Other Poetries by NEHAL INAYAT GILL »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City