وہ جانتا ہے میں اس پہ مرتا بہت ہوں

Poet: Syed Farrukh Imdad
By: Syed Farrukh Imdad, Lahore

وہ جانتا ہے میں اس پہ مرتا بہت ہوں
کام الٹے سیدھے میں بھی کرتا بہت ہوں

اس شخص نے دیکھو کیسے تنہا کیا مجھے
جو کہتا تھا جدائی سے میں ڈرتا بہت ہوں

مجھ سے انا میں جیت جانے کا کبھی سوچنا بھی نہ
میری جان ! ایسی جنگ میں ، میں لڑتا بہت ہوں

مت پاس آ میرے ، اے آگ کی دیوی
میں لاوا ہوں اور تپش سے ابھرتا بہت ہوں

چلتے تھے فرخ جہاں ہم اک دوسرے کے ساتھ
ان راہوں کو چومتا ہوا میں گزرتا بہت ہوں

Rate it:
28 Aug, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Syed Farrukh Imdad
Visit 12 Other Poetries by Syed Farrukh Imdad »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

bohoth khoob janab bohoth hi umda ashaar jeetay rehyai khush rehyai ....... Jazak Allah Hu Khair

By: farah ejaz, Karachi on Sep, 03 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City