خسرو بختیار نے آٹے کے موجودہ بحران کو مصنوعی قرار دے دیا

اسلام آباد: (21 جنوری 2020) وفاقی وزیر نیشنل فوڈ سیکیورٹی خسرو بختیار نے سینیٹ میں پالیسی بیان دیتے ہوئے آٹے کے موجودہ بحران کو مصنوعی قرار دے دیا۔

سینیٹ کا اجلاس چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت ہوا۔ چیئرمین سینیٹ کے طلب کرنے پر وفاقی وزیر نیشنل فوڈ سیکیورٹی خسرو بختیار نے آٹے کے بحران پر پالیسی بیان دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں چالیس لاکھ ٹن گندم موجود ہے۔ انشاءاللہ آٹے کا مصنوعی بحران جلد ختم ہوجائے گا۔

خسرو بختیار نے آٹے کی قیمت میں اضافہ کی وضاحت پیش کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا آٹے کا جو ریٹ بتارہا ہے وہ چکی کے آٹے کا ہے، جو صرف پاکستان میں چار فیصد استعمال ہوتا ہے۔ سندھ کی سپلائی میں دس ہزار ٹن تک سپلائی بڑھادی گئی ہے۔

قائد حزب اختلاف راجہ ظفرالحق نے آٹا بحران کو مصنوعی قرار دینے کا خسرو بختیار کا بیان مسترد کردیا اور معاملہ فوڈ سیکیورٹی کمیٹی کے سپرد کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ خسرو بختیار کو اس وقت ہوش آیا جب آٹے کا بحران شدت اختیار کرگیا۔ انہوں نے مسئلے کو مسئلہ ہی نہیں سمجھا۔

اپوزیشن کے مطالبے پر چیئرمین سینیٹ نے آٹے کا معاملہ نیشنل فوڈ سیکیورٹی کمیٹی کے سپرد کردیا اور کمیٹی کو جائزہ لے کر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔

خسرو بختیار دوبارہ وضاحت کیلئے اٹھے تو اپوزیشن ارکان نے ہنگامہ آرائی کی۔ خسرو بختیار اور اپوزیشن ارکان کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔ چیئرمین سینیٹ ارکان کو بار بار بیٹھنے کی ہدایت کرتے رہے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.