bbc-new

اپیل کا نیا آئی فون 14 ’میڈ اِن چائنہ‘ کے بجائے ’میڈ اِن انڈیا‘ کیوں ہو گا؟

انڈیا میں فون بنائے جانے کا ہر گز یہ مطلب نہیں یہ آئی فون انڈیا میں سستے ملیں گے۔ اگرچہ انڈیا کے شہریوں کو آئی فونز پر ’میڈ ان انڈیا‘ کا ٹیگ دیکھنے کو ملے گا لیکن انھیں اسے حاصل کرنے کے لیے بھاری رقم ادا کرنی ہو گی۔

ایپل کا کہنا ہے کہ وہ اپنی سپلائی چین کو تبدیل کرنے کے لیے چین کے بجائے انڈیا میں اپنے آئی فون 14 تیار کر رہا ہے۔

کمپنی اپنے زیادہ تر فونز چین میں بناتی ہے لیکن اب یہ اپنی پروڈکشن ملک سے باہر منتقل کر رہی ہے کیونکہ امریکہ اور چین میں کشیدگی بڑھ رہی ہے۔

عالمی وبا کے دوران چین کی جانب سے کووڈ کے لیے ٹھوس پالیسیاں نہ ہونا ملک میں بڑے پیمانے پر لاک ڈاؤن کی وجہ بنا اور بڑے پیمانے پر کاروباری سرگرمیوں میں تعطل آیا۔

یاد رہے کہ ٹیکنالوجی کی بڑی کمپنی ایپل نے رواں ماہ کے اوائل میں آئی فون 14 کی رونمائی کی ہے۔

نئے آئی فون 14 میں نئی جدید ٹیکنالوجی اور حفاظتی صلاحتیں متعارف کروائی ہیں۔ ایپل نے ایک بیان میں کہا کہ ’ہم انڈیا میں آئی فون 14 کی تیاری کے لیے پُرجوش ہیں۔‘

تائیوان کی کمپنی ’فوکس کان‘ جو زیادہ تر آئی فون بناتی ہے انڈیا کی ریاست تامل ناڈو میں بھی کام کر رہی ہے اور وہاں پر زیادہ تر آئی فون کے پرانے ماڈل تیار کیے جاتے ہیں۔

لیکن اب ایپل نے اپنا سب سے نیا آئی فون 14 انڈیا میں بنانے کا بڑا اقدام اٹھایا ہے۔

انڈیا میں یہ پروڈکشن کر کے اپیل کمپنی وہاں اپنے قدم جمانا چاہتی ہے۔ گذشتہ سال انڈیا میں ایپل کے مارکیٹ شیئر چار فیصد تھے۔

امریکی کمپنی انڈیا میں اب بھی چینی اور جنوبی کوریا کے سستے موبائل سمارٹ فونز کے ساتھ مقابلے کے لیے جدوجہد کر رہی ہے، جن کی انڈیا میں اب بھی اجارہ داری ہے۔

لیکن انڈیا میں فون بنائے جانے کا ہر گز یہ مطلب نہیں یہ آئی فون انڈیا میں سستے ملیں گے۔ اس کی وجہ فون میں لگنے والے پارٹس پر خرچ ہونے والی بہت زیادہ درآمدی ڈیوٹی اور ٹیکس ہیں۔

اگرچہ انڈیا کے شہریوں کو آئی فونز پر ’میڈ ان انڈیا‘ کا ٹیگ دیکھنے کو ملے گا لیکن انھیں اسے حاصل کرنے کے لیے بھاری رقم ادا کرنی ہو گی۔

آئی فون کی انڈیا میں پروڈکشن کے اعلان کو نریندر مودی کی انتظامیہ کی کامیابی کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔

ان کی حکومت نے آٹھ سال قبل ’میک اِن انڈیا‘ کے نام سے ایک فلیگ شپ پروگرام شروع کیا تھا جس کا مقصد ملک میں مصنوعات کی تیاری اور برآمدات کو بڑھانا تھا۔

دوسری طرف ایپل کا یہ اعلان تائیوان اور تجارت کے معاملے پر چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی کے تناظر میں اس کی سپلائی میں تعطل نہ آنے دینے کے لیے کیے جانے والا تازہ اقدام ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ایپل: نئے آئی فون 14 کی خصوصیات کیا ہیں اور دیگر مصنوعات میں نیا کیا ہے؟

’میں انتظار نہیں کر سکتا تھا‘: انڈین شہری جو آئی فون 14 خریدنے دبئی پہنچ گیا

بچے کو سمارٹ فون کس عمر میں دینا چاہیے؟

رواں ماہ کے اوائل میں انویسٹمنٹ بینک جے پی مورگنکے تجزیہ کاروں نے کہا تھا کہ ایپل کو اپنے آئی فون کی پروڈکشن کا پانچ فیصد انڈیا منتقل کر دینا چاہیے۔

رپورٹ میں پیش گوئی کی گئی تھی کہ سنہ 2025 تک آئی فون کیایک چوتھائی پروڈکشن جنوبی ایشیائی ممالک کو منتقل کر دی جائے گی۔

گذشتہ برس ایپل کے سپلائر ’فوکس کان‘ نے ویتنام میں ڈیڑھ ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی تھی۔

ویتنام کے ریاستی میڈیا نے رپورٹ کیا ہے کہ کمپنی نے 30 کروڑ ڈالر کے ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں تاکہ وہ آئی فون کی پروڈکشن میں اضافے کے لیے ملک کے شمال میں موجود کارخانے میں توسیع کر سکے۔


News Source   News Source Text

BBC
مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.