عدالت نے اے آر وائی نیوز کا این او سی منسوخ کرنے کا حکم نامہ معطل کر دیا

image
سندھ ہائی کورٹ نے نجی نیوز چینل اے آر وائی کا این او سی منسوخ کرنے کا حکم نامہ عارضی طور پر معطل کر دیا ہے۔

سنیچر کو عدالت میں پیمرا کی جانب سے خواجہ شمس اسلام ایڈووکیٹ پیش ہوئے۔

انہوں نے عدالت میں کہا کہ ’سب سے زیادہ نفرت اور زہر اے آر وائی دکھا رہا ہے۔ دو تین دن کا وقت دے دیں، پورا کیس سن کر فیصلہ کر لیں۔‘

خواجہ شمس اسلام کا کہنا تھا کہ ’لائسنس منسوخی کی وجوہات بھی دی جائیں گی، یہ بہت ہی حساس معاملہ ہے تمام چیزیں عدالت کے سامنے رکھیں گے۔‘

اے آر وائی نیوز کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ’اے آر وائی قواعد کے تحت کام کر رہا ہے۔ اس سے قبل بھی ادارے کے خلاف منفی پروپیگنڈہ کیا گیا تھا۔‘

انھوں نے کہا کہ ’نوٹی فکیشن کی معطلی کے بعد نشریات بحال نہ ہوئیں تو توہین عدالت کی درخواست دائرکریں گے۔‘

واضح رہے کہ اے آر وائی نیوز نے این اوسی منسوخ کرنے کا فیصلہ سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ کیس کی آئندہ سماعت 17 اگست کو ہو گی۔

دوسری جانب سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد کراچی پریس کلب کے باہر اے آر وائی نیوز کے ملازمین اور صحافی تنظیموں کی جانب سے جشن منایا جا رہا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ’اس سے قبل بھی ادارے کے خلاف منفی پروپیگنڈہ کیا گیا تھا۔‘ (فوٹو: اے آر وائی نیوز)

سیکریٹری کراچی پریس کلب محمد رضوان بھٹی کا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلہ خوش آئند ہے۔ صحافیوں کا معاشی قتل عام کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ’اداروں کی بندش مسائل کا حل نہیں ہے۔ حکومت متعلقہ فورمز پر معاملات کو حل کرنے کی کوشش کریں۔‘

خیال رہے رہے گزشتہ روز وزارت داخلہ نے چینل اے آر وائی کی سکیورٹی کلیئرینس ایجنسیوں کی جانب سے منفی رپورٹ ملنے پر کینسل کر دی تھی۔

وزارت داخلہ کی جانب سے جاری نوٹیفیکیشن میں کہا گیا تھا کہ ’ایجنسیوں کی جانب سے ناسازگار رپورٹ کی بنیاد پر اے آر وائی نیوز کو جاری کیا جانے والا این او سی اگلے آرڈر آنے تک فوری طور پر منسوخ کیا جا رہا ہے۔‘


News Source   News Source Text

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.