پاکستان پر افغان مہاجرین کابوجھ بڑھنےکا امکان، آئی ایم ایف

image

فوٹو: اے ایف پی

آئی ایم ایف نے پاکستان کی علاقائی اکنامک آوٹ لک رپورٹ جاری کر دی جس میں افغانستان میں بحرانی صورت حال سے پاکستان پر مہاجرین کا بوجھ بڑھنے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔

عالمی مالیاتی ادارے نے اپنی علاقائی آوٹ لک رپورٹ میں کہا ہے کہ افغانستان میں بحرانی صورتحال کے باعث 10لاکھ افغان پاکستان اور دیگر ہمسایہ ممالک کا رخ کر سکتے ہیں۔ نئے مہاجرین کی وجہ سے پاکستان کو سالانہ 50کروڑ ڈالرز اضافی اخراجات برداشت کرنا ہوں گے۔ پاکستان میں 15 لاکھ سے زیادہ افغان مہاجرین پہلے سی ہی موجود ہیں۔

رپورٹ میں پاکستان سمیت تیل درآمد کرنے والے ممالک میں مہنگائی بڑھنے کا خدشہ ہے، تیل کی پیداوار میں کمی کے باعث عالمی مارکیٹ میں قیمتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے تاہم اگلے سال مہنگائی میں کمی متوقع ہے۔

 پاکستان سمیت ہمسایہ ممالک میں سیکیورٹی مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔ لیبر مارکیٹ اور سماجی مسائل بڑھ سکتے ہیں۔ صورتحال سے نمٹنے کے لیے عالمی برادری کی جانب سے مدد کی ضرورت درکار ہوگی۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ افغان مہاجرین کے باعث تاجکستان کو دس کروڑڈالرز اور ایران کو سالانہ تیس کروڑ ڈالر کا خرچہ برداشت کرنا پڑے گا۔

آئی ایم ایف کی معاشی آوٹ لک رپورٹ

واضح رہے کچھ روز پہلے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے 2022 میں پاکستان میں مہنگائی کی شرح 9.2 فیصد تک جانے کا امکان ظاہر کیا تھا۔

آئی ایم ایف کی جاری کردہ معاشی آوٹ لک رپورٹ کے مطابق معاشی شرح نمو گزشتہ سال 3.9 تھی جو اس سال بڑھ کر 4فیصد رہنے کا امکان ہے جبکہ حکومت پاکستان اس سال معاشی ترقی 5فیصد تک رہنے کے لیے پرعزم ہے۔ اس سے پہلے عالمی بینک نے اپنی آوٹ لک رپورٹ میں شرح نمو 3.4 فیصد رہنے کا تخمینہ لگایا تھا۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ پاکستان 2026 تک 5فیصد شرح سے ترقی کرے گا اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بھی منفی 0.6 سے بڑھ کر منفی 3.1 فیصد تک جانے کا امکان ظاہر کیا ہے۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.