’پاکستان کے ایٹمی دھماکوں سے خطے میں طاقت کا توازن بحال ہوا‘

image

پاکستان نے 24 برس قبل 28 مئی 1998 کو انڈیا کے ایٹمی دھماکوں کے جواب میں پانچ ایٹمی دھماکے کیے۔ بعد ازاں اس دن کو یوم تکبیر کا نام دیا گیا۔

پاکستان کی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کی جانب سے یومِ تکبیر پر جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ’24 سال قبل پاکستان نے دھماکے کرکے کم از کم دفاعی صلاحيت کا مظاہرہ کيا۔ پاکستان کی جانب سے کیے گئے ایٹمی دھماکوں سے خطے میں طاقت کا توازن بحال ہوا۔‘

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ ’افواج پاکستان اس بے لوث جذبے کے تحت کام کرنے والے اُن تمام لوگوں کو خراج تحسین پیش کرتی ہے، جو تمام مشکلات کے باوجود ثابت قدم رہے اور اسے ممکن بنایا۔‘

28 مئی 1998 کی صبح پاکستان کی تمام عسکری تنصیبات کو ہائی الرٹ کر دیا گیا۔ دھماکے کے مقام سے دس کلومیٹر دورآبزرویشن پوسٹ پر دس ارکان پر مشتمل ٹیم پہنچ گئی جن میں اٹامک انرجی کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر اشفاق، ڈاکٹر عبدالقدیر خان، ڈاکٹر ثمر مبارک، کہوٹہ ریسرچ لیبارٹریز کے چار سائنس دانوں کے ساتھ  پاک فوج کی ٹیم کے قائد جنرل ذوالفقار شامل تھے۔

تین بج کر 16 منٹ پر فائرنگ بٹن دبایا گیا جس کے بعد چھ مراحل میں دھماکوں کا خود کار عمل شروع ہوا۔

پاکستان کی جانب سے ایٹمی دھماکوں کے بعد 28 مئی کو ’یوم تکبیر‘ سے موسوم کیا گیا۔ اس دن سے 28 مئی کو یوم تکبیر کے طور پر منانے کے لیے ملک کے طول و عرض میں تقاریب کا اہتمام کیا جاتا ہے۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.