زلفی بخاری کی مبینہ آڈیو لیک، ’گھڑی نہ میں نے لی نہ میں نے بیچی‘

image
پاکستان کے سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی اور تحریک انصاف کے رہنما زلفی بخاری کی ایک آڈیو سوشل میڈیا پر گردش میں ہے جس میں گھڑیاں بیچنے کے بارے میں گفتگو کی گئی ہے۔

جمعرات کو سامنے آنے والے اس 20 سیکنڈ کے مختصر آڈیو کلپ میں مبینہ طور پر بشریٰ بی بی کی آواز کہتی ہے کہ ’خان صاحب کی کچھ گھڑیاں ہیں، انہوں نے کہا ہے کہ آپ کو بھیج دوں، آپ اُن کو کہیں بیچ وغیر دیں۔‘

پہلی آواز مزید کہتی ہے کہ ’کیونکہ وہ ان کے استعمال کی نہیں ہیں، تو وہ چاہ رہے تھے کہ آپ کہیں کر دیں۔‘

دوسری طرف موجود آواز جو مبینہ طور پر زلفی بخاری کی ہے وہ کہتے ہیں کہ ’ضرور مرشد، میں کر دوں گا، میں کر دوں گا۔‘

بعد ازاں ایک ٹویٹ میں زلفی بخاری نے لکھا کہ ’پہلے کہا جا رہا تھا کہ عمر ظہور نامی کسی شخص کو فرح گجر کے ذریعے گھڑٖیاں بیچی گئیں۔ جب اُن کو لیگل نوٹس بھیجا تو اب نئی کہانی سامنے آ گئی ہے کہ اصل میں یہ گھڑی میرے ذریعے بیچی گئی۔‘

انہوں نے مزید لکھا کہ ’میں واضح کر دوں کوئی گھڑی نہ میں نے لی نہ میں نے بیچی۔‘

پہلے کہا جا رہا تھا کہ عمر ظہور نامی کسی شخص کو فرح گجر کے ذریعے گھڑیاں بیچی گئیں، جب ان کو لیگل نوٹس بھیجا تو اب نئ کہانی سامنے آگئ ہے کہ اصل میں یہ گھڑی میرے ذریعے بیچی گئیں، میں واضع کر دوں کوئ گھڑی نہ میں نے لی نہ میں نے بیچی

1/2

— Sayed Z Bukhari (@sayedzbukhari) December 8, 2022

زلفی بخاری کی ٹویٹ سے پہلے سوشل میڈیا پر ان کی ایک پرانی ویڈیو شیئر کی گئی جس میں گھڑیاں بیچنے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے وہ کہتے ہیں کہ ’قانون کی بات کریں تو ہر کام قانون کے مطابق ہوا ہے، جس قیمت پر توشہ خانہ سے تحفے خریدے گئے وہ 20 فیصد رقم تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ جس قیمت پر خریدنا ہو وہ بتانا اور آگے بیچ دینا اس میں کوئی غلط نہیں۔

’یہ تو کوئی ایشو ہی نہ بنتا اگر عمران خان کا نام نہ ہوتا، چونکہ عمران خان کے حوالے سے چار سال میں کوئی چیز ملی نہیں تو اس کو ایشو بنایا جا رہا ہے۔‘ تاہم یہ ویڈیو آج کی نہیں بلکہ تین ہفتے پرانی ہے جس کو مقامی میڈیا نے بھی چلایا۔

خیال رہے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خلاف توشہ خانہ سے لیے گئے تحائف کی قیمتیں اور خریداری کے ذرائع ظاہر نہ کرنے پر الیکشن کمیشن میں ریفرنس بھی دائر کیا گیا تھا۔

ریفرنس پر فیصلہ سناتے ہوئے الیکشن کمیشن نے عمران خان کو نااہل قرار دیا تھا۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
پاکستان کی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.