انٹربینک اوراوپن مارکیٹ میں ڈالرکی اُڑان جاری

image

روپے کی بےقدری اور ڈالر کی اونچی اڑان کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ 18 مئی کو انٹربینک میں ڈالر 1.51 روپے اضافے کےساتھ 197.75 کی سطح پر پہنچ گیا۔

بدھ کو اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر201 روپے پرفروخت ہورہاہے۔ملک کی معاشی صورت حال ہر نئے روز گراوٹ کا شکار ہے جس کا اثر روپے کی قدر پر بھی پڑ رہا ہے۔

سترہ مئی کو انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر دوران ٹریڈنگ ایک روپے 56 پیسے مہنگا ہوکر 195 روپے 74 روپے کا ہوا اور بڑھتا ہوا 200 روپے تک جاپہنچا تھا۔

اوپن مارکیٹ میں ڈالر 196.50 سے بڑھ کر 198 روپے کی بلند ترین سطح پر بند ہوا جب کہ غیر قانونی منی ڈیلرز نے ڈالر 200 روپے میں فروخت کئے۔

نئی حکومت کے صرف 36 دن میں ڈالر 15 روپے سے زائد مہنگا ہوچکا ہے۔مارکیٹ میں بڑھتے ہوئے سیاسی و معاشی بحران سے بے یقینی میں اضافہ ہوا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف معاملات طے پانے تک پاکستان کے روپے کی قدر میں کمی کا سلسلہ نہیں تھمے گا۔

آئی ایم ایف سے مذاکرات

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان فیصلہ کن مذاکرات بدھ سے دوحا میں شروع ہو رہے ہیں،مذاکرات کا یہ دور 25 مئی تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ پاکستانی وفد کی سربراہی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کریں گے۔

مذاکرات کے دوران پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان ساتویں اقتصادی جائزہ مذاکرات میں معاشی امور زیر غور آئیں گے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ پروگرام کی بحالی کیلئے حکومت کو پیٹرول، ڈیزل، بجلی پر سبسڈی میں بتدریج کمی لانا ہوگی، آئی ایم ایف حکام کو قائل کرنے کی صورت میں ہی پاکستان کو 96 کروڑ ڈالر کی اگلی قسط ملے گی۔

دوسری جانب نئے مالی سال 2022-23 کا بجٹ 10 جون کو پیش کرنے پر غور کیا جارہا ہے۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.