برطانوی انتخابات: مسلم کمیونٹی کا کردار کتنا اہم

برطانیہ میں بریگزٹ ڈیل کے باعث کئی ماہ  کےتعطل کے بعد 12 دسمبر کو عام انتخابات ہو رہے ہیں جن سے دیگر کمیونیٹیز کی طرح مسلمانوں کی بھی کچھ توقعات ہیں۔

مسلم کونسل آف  برطانیہ نے 12دسمبر کو  ہونے والےپارلیمانی انتخابات میں برطانیہ کے 31 حلقوں کی نشاندہی کی ہے جہاں مسلمانوں کے ووٹ فیصلہ کن کردار ادا کر سکتے ہیں۔

مسلم کمیونٹی کے ووٹ سے  وہ حلقے سب سے زیادہ متاثر ہوسکتے ہیں جہاں ہار جیت کا فرق نہ ہونے کے برابر ہے جن میں کینسنگٹن، ڈیوڈلے، نارتھ اور رچمنڈ پارک کے حلقے شامل ہیں۔

2017 میں ہونے والے عام انتخابات میں  کینسنگٹن کے حلقے میں لیبر پارٹی کی امیدوار  محض 20 ووٹوں کے فرق سے کامیاب قرار پائی تھیں۔

اس ضمن میں مسلم کونسل آف برطانیہ نے ان انتخابات میں سیاسی جماعتوں کی پالیسیز کے بارے میں ایک منشور جاری کیا ہے۔

جاری کردہ منشور کے مطابق امیدواروں کو مسلمان شہریوں کے ووٹ حاصل کرنے کے لیے اسلاموفوبیا اور نسلی منافرت کا مقابلہ کرنے کا عہد کرنا ہوگا۔

برطانیہ میں’’محمد‘‘اور’’ فاطمہ‘‘ نام سرفہرستواضح رہے کہ برطانیہ کی موجودہ حکومت پر اسلامو فوبیا کو فروغ دینے کے الزامات لگتے رہے ہیں۔

اس حوالے سے برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ  شایع ہونے کے بعد حکمراں جماعت  نے کئی ممبران کو اسلامو فوبیا کے الزام میں معطل بھی کیا ہے۔

برطانوی مسلم کمیونٹی کا ماننا ہے کہ انہیں ایسی زیروٹالیرینس پالیسی کی ضرورت ہے جہاں حقیقی اور فوری اقدامات ہوں۔

دوسری جانب لیبر پارٹی  پر  بھی یہودی مخالف سوچ  کا الزام لگتا رہا ہے۔

کل ہونے والے انتخابات میں  کون سی پارٹی بازی لے جائے گی اور وزیر اعظم بننے کا خواب کس لیڈر کا پورا ہوتا ہے، اس بارے کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔

تاہم  کل کے انتخابات کے لیے تمام پارٹیوں نے اپنی اپنی کامیابی کے لیے سر توڑ کوششیں شروع کر دی ہیں۔ جن میں نمایاں کنزرویٹو اور لیبر پارٹی ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.